District admin decides to reduce transport fares

اس حوالے سے ایک اہم اجلاس اسسٹنٹ کمشنر چترال عبد الاکرم کی زیر صدارت اُن کے آفس میں منعقد ہوا ۔ جس میں عوام کی طرف سے ناظمین اور ٹرانسپورٹرز کی طرف سے ڈرائیور یونین اور اڈہ مالکان نے شرکت کی ۔ اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر نے کہا ۔ کہ طے شدہ کرایوں سے زیادہ وصول کرنے والے ڈرائیوروں کے ساتھ سختی سے نمٹا جائے گا ۔ اور کسی قسم کی رو رعایت نہیں رکھی جائے گی ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ ہم چاہتے ہیں ۔ کہ مناسب کرایوں کے اندر عوام کو سہولت فراہم ہو ۔ اور عوام یہ محسوس کریں ۔ کہ لواری ٹاپ کے دشورا گزار راستے کے خاتمے کے بعد کرایوں میں کمی آئی ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ انتظامیہ اپنی رٹ قائم کرنا جانتی ہے ۔ اور اگر ضرورت پڑے ۔ تو ہر صورت اُسے قائم رکھا جائے گا ۔ اس موقع پر چترال سے باہر مختلف مسافر گاڑیوں کے کرایے مقرر کئے گئے ۔ جن کی باقاعدہ منظوری ہفتے کے روز لوکل کرایوں کو مقرر کرنے کے بعد دی جائے گی ۔ اور اُس پر سختی سے عملدرآمد کیا جائے گا ۔ اجلاس میں متفقہ طور پر فیصلہ کیا گیا ۔ کہ کرایے بشکل ٹکٹ اڈے پر لئے جائیں گے ۔ تاکہ اضافی کرایہ لینے کے عمل کا تدارک کیا سکے ۔ اجلاس میں اسسٹنٹ کمشنر نے عوام کی طرف سے بھر پور تعاون کرنے کی ضرورت پر زور دیا گیا ۔ اور کہا ۔ کہ عوام کی طرف سے اضافی کرایہ دینے کی صورت میں اُن کے خلاف بھی قانونی کاروائی کی جائے گی ۔ اجلاس ہفتے کے روز لوکل کرایہ مقرر کرنے کے مکمل ہو گا ۔]]>

Leave a Reply

Your email address will not be published.