Two-day Chitral youth summit underway in Peshawar

جستجو ایک سلگتی خواہش کے عنوان پر سیر حاصل  بحث کی جس کے بعد ایکسپلورنگ چترال کے چیف ایگزیکٹیو وہاب صبا نے چترال میں سیاحت کے مواقع اور رجحان پر اپنے خیالات کا اظہار کیا ۔ نماز اور کھانے کے وقفے کے بعد لاہور سے چترال یوتھ سمٹ کے لیے تشریف لائے ہوئے مہمان مقرر رضوان اللہ خان چیف ایگزیکٹیو آر ایف ٹی برینز نے خودی کی طاقت  پر ایک طویل اور شراکتی طرز کا ایک بہت ہی پر مغز اور معلوماتی سیشن کی میزبانی کی۔ جس میں انہوں نے چترالیوں کو دنیا کا مہذب ترین اور دوراندیش قوم قرار دیا۔  پروگرام کے پہلے دن کے آخری مقرر پشاور جوڈیشل کمپلیکس میں چترال سے تعلق رکھنے والے سول جج اور سابق کسٹم آفیسر خالد بن ولی تھے  جنہوں نے اپنے خطاب میں چترال یوتھ سمٹ کو چترالی نوجوانوں کےلیےتبدیلی لانے والا پروگرام اور چترالی ثقافت کے فروغ کا ایک اہم ذریعہ قرار دیا۔

چترالی نوجوانوں کے دو معروف اداروں پاک آرگنائزیشن آف ایجوکیشنل ٹریننگ اور یوتھ ایمپاورمنٹ اینڈ سپورٹ سوسائٹی نے اہتمام کیا ہوا ہے اور اس پروگرام کے لیے انہیں دیگر ادروں کا بھی اشتراک شامل ہے جن میں قشقاراور چترال ایکسپریس بھی شامل ہیں۔ اس پروگرام کے انعقاد کا مقصد چترالی نوجوانوں میں چائنا پاکستان اکنامک کوریڈور کے اہمیت اور ان سے پیدا ہونے والے چیلنجز اور خطرات سے نمٹنے لیے آگاہی اور شغور بیدار کرنا ہے۔ پروگرام کے پہلے دن چترالی نوجوانوں کو زندگی گزرانے کے اہم پہلو ؤں پر راہنمائی کی گئی جبکہ منتظمین کے مطابق کل سی پیک کے حوالے سے راہنمائی اور بیداری پر مبنی سیشنز رکھے گئے ہیں جن پر کماحقہ گفتگو کرنے کے لیے چترال یونیورسٹی کے پراجیکٹ ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر بادشاہ منیر بخاری، آیٹرب کے علی اکبر قاضی، آئی ایم سائنسز کے اسسٹنٹ ڈائریکٹرکیو ای سی اعجاز احمد، سی آئی آئی ٹی آٹک کیمپس کے کوآرڈنیٹر ایم پی پروگرام   ڈاکٹر ریاض محمد دانش، شہید بے نظیر بھٹو یونیورسٹی چترال کیمپس میں انگلش لٹریچر کے پروفیسر ظہور الحق دانش، اوکٹو تھری ٹیکنالوجی کے عروج فاطمہ اور دیگر جیسے مقررین ، مقررین اور دانشوروں کو بلایا گیا ہے۔

]]>

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *