Chitral Today newspaper

ضلع اپر چترال میں ڈیڈک کا اجلاس

ضلع اپر چترال میں ڈیڈک کا اجلاس۔ رکن صوبائی اسمبلی، چئیرمین ڈیڈک اپر چترال کے سربراہی میں اس اجلاس میں تمام محکموں کے سربراہان نے شرکت کی۔

  اپر چترال(گل حماد فاروقی) ڈسٹرکٹ ڈیویلپمنٹ ایڈوایزری کمیٹی یعنی ڈیڈک چیرمین ضلع اپر چترال رکن صوبائی اسمبلی مولانا ہدایت الرحمان کے زیر صدارت ضلع اپر چترال میں ڈیڈک کا ایک اہم اجلاس بونی میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں اپر چترال کے ضلعی انتظامیہ کے ذمہ داران کے علاوہ تمام محکمہ جات کے سربراہاں نے بھی شرکت کی۔

   تمام محکمہ جات کے سربراہاں نے اپنے کارگردگی رپورٹ پیش کی اور محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کے زیرنگرانی سڑکوں پر جاری کام کو تیز کرنے کے لئے ایکسن سی اینڈ ڈبلیو کو تاکید کئی گئی جس پر ایکسین نے یقین دیہانی کر ائی کہ ہم اپنے تمام تر کوشش کرکے ان سڑکوں کی تعمیر جلدازجلد مکمل کرینگے۔

   محکمہ صحت میں حالیہ دنوں نکالے جانے والے ہیلتھ ٹیکشن پر غور کرنے کے لئے ڈسٹرکٹ ہیلتھ افسر کو چئیرمین ڈیڈک کی جانب سے ہدایت کی گئی کہ ضلع اپر چترال کے حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے ان نکالے جانے والے ملازمین کے بارے میں حکم بالا کو اگاہ کیا جائے۔

   محکمہ خوراک میں حالیہ دنوں بھرتی کی گئی ملازمین کے بارے میں عوامی تحفظات پر جب بات کی گئی تو ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر کا کہنا تھا کہ تمام تر تعنیاتی کی اڈر ضلع سے باہر یعنی سوات سے کرائی گئی ہیں۔ انکی تمام تر ذمہ داری اسسٹنٹ ڈائریکٹر ملاکنڈ پر ہوتی ہے۔ ڈی ایف سی محکمہ فوڈ ضلع اپر چترال نے اس معاملے میں اپنی بے بسی کا اظہار کیا۔

  واضح رہے کہ محکمہ خوراک میں حالیہ دنوں مختلف پوسٹوں پر بھرتی کی گئی تھی جس میں مختلف مقام پر گرین گودام میں لوکل افراد کی بھرتی نہیں کی گئی اور بعض علاقوں میں گوداموں کو دی گئی زمین پر لینڈڈونر یعنی زمین کے مالکان کے تحفظات ہیں۔

    چیرمین ڈیڈک اپر چترال کا کہنا ہے کہ۔میں بحثیت دو اضلاع یعنی ضلع لوئیر چترال اور ضلع اپر چترال کا ایک ہی ایم پی اے ہوں مجھے اعتماد میں لئے بغیر درجہ چہارم یعنی کلاس فور کی بھرتی کی جاتی ہے اور اکثر پوسٹ میرٹ کے بغیر صرف سفارش کی بنیاد پر کرایا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان بھرتیوں پر عوام یہ بھی الزام لگاتے ہیں کہ تمام بھرتیوں میں پیسے لئے جاتے ہیں جس نے انصاف کی حکومت میں میرٹ کو پامال کیا گیا ہے۔ چئیرمین ڈیڈک ضلع اپر چترال مولانا ہدایت الرحمان نے ہمارے نمائندے سے حصوصی باتیں کرتے ہوئے کہا کہ جب کوئی مسئلہ پیدا ہوتا ہے تو اس پر ڈیڈک کا اجلاس طلب کرتا ہوں۔ اس مرتبہ محکمہ حوراک اور دیگر محکموں میں جو بھرتیاں ہوئی ہیں اس میں میرٹ کی دھجیاں اڑائی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اس مرتبہ محکمہ حوراک (فوڈ) میں جو بھرتیاں ہوئی ہیں اس میں مجھے بالکل نظر انداز کرتے ہوئے اعتماد میں نہیں لیا گیا۔

چئیرمین ڈیڈک مولانا ہدایت الرحمان نے کہا کہ ان بھرتیوں کیلئے ضلع اپر چترال میں ان محکموں ک سے مقامی سربراہان کو ہٹاکر نیچے اضلاع سے افسران کو یہاں صرف اسلئے تعینات کئے گئے تاکہ وہ اس محکمے کے وزیر کے کہنے پر ان کے من پسند لوگوں کو بھرتی کرے۔ محکمہ فوڈ میں سولہ بندے جو بھرتی ہوئے ہیں اس میں صرف وزیر، سیکرٹری اور دیگر افسران کی سفارش پر ان کو بھرتی کیا گیا۔ بریپ میں ایک غلہ گودام بنایا گیا ہے، گوہکیر میں بھی غلہ گودام بنایا گیا ہے جس کیلئے جن لوگوں نے زمین دی تھی ان کو نظر انداز کرکے دیگر سفارشی لوگوں کوبھرتی کیا ہے جس سے یہاں بہت مسئلہ پیدا ہوا ہے اور زمین کے مالک دھمکی دے رہے ہیں کہ وہ ان گوداموں کو تالہ لگاکر ان میں غیر مقامی یا سفارشی لوگوں کو جو بھرتی کیا ہے ان کو کام نہیں کرنے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مردان سے من پسند لوگوں کو بلا کر ان کو درجہ چہارم کے پوسٹ پر بھرتی کیا گیا ہے اگر یہ انصاف ہے تو ایسے انصاف کو پھر خدا حافظ۔ انہوں نے زور دیکر کہا کہ وزیر اعلےٰ خیبر پحتون خواہ کو چاہئے کہ اس کا نوٹس لے اور کم از کم درجہ چہارم کی آسامیوں پر میرٹ پر اور حق دار لوگوں کو بھرتی کیا جائے جو مقامی ہو اور جن لوگوں نے زمین دی ہیں ان کا پہلا حق بنتا ہے۔  

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *