سینتالیس سال سے زیر تعمیر سڑک

سینتالیس سالوں سے زیر تعمیر سڑک

محمد الیاس احمد
گولدور، چترال
چترال بازار سے گولدور گاؤں میں سے گزرتے ہوئے گورنر کاٹیج اور اور بیرموغلشٹ چترال گول نیشنل پارک کو جانے والی سڑک کی پھر تجدید جا ری ہے جو ہرچند سالوں کے وقفے کے بعد یاد ہمیشہ سے کی جاتی ہے اور یہ سلسلہ 1975 سے جاری ہے مگر اس سڑک کی بنیادی خرابی کوئی دور نہیں کرتا۔ 
پہاڑوں سے بارش اور گھروں سے پانی کے سڑک کے پار جانے کے راستے 3 جگہوں پر بند ہونے سے  پانی کا ریلا سیدھی طرح سڑک پر بہتا ہوا سڑک میں گڑھے بناتا ہوا تارکول ساتھ بہا کر بازار تک پہنچ آتا ہے۔  اس کا کوئی علاج نہیں کیا جاتا مگر ملک کا پیسہ اس منصوبے پر بار بار لگا کر ضائع کیا جا رہا ہے۔ اس مسئلے کا کوئی پوچھنے والا نہیں ہے، بس بنانے والے اندھا دھند سڑک کی تعمیر کر کے مختلف گروہوں سے اور شخصیات سے اس کے افتتاح  کراتے رہتے ہیں۔
منصوبے کا آغاز بنیادی خرابی دور کرنے کے بعد کی جائے اور اس غریب ملک کا پیسہ یوں اندھا دھند نہ لگایا جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *