Founding members say paragliding association hijacked

HIKEP انہوں نے ایسوسی ایشن کے قواعدکی دھجیاں اُڑا کر نہ صرف ملنے والے فنڈ میں بڑے پیمانے پر کرپشن کی ۔ بلکہ غیر قانونی طور پر چترال میں اپنے دوستوں کو ایسوسی ایشن میں جگہ دی ۔ اور اصل ممبران کو کو کھڈے لائن لگا دینے کی ناکام کوشش کی ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ سابق صدر سیف اللہ جان اور شہزادہ فرہاد عزیز مجموعی طور پر ایسو سی ایشن کے بیس لاکھ روپے کے فنڈ ہڑپ کر گئے ہیں ۔ جبکہ یہ فنڈ پائلٹوں کیلئے گلائڈر ز کی خریداری اور دیگر سہولیات کی فراہمی کیلئے دیا گیا تھا ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ ان کے اس اقدام کے خلاف ضلعی انتظامیہ اور دیگر حکام کو بھی آگاہ کر دیا گیا ۔ لیکن مذکورہ افراد اپنے اثر و رسوخ اور تعلقات کی بنیاد پر خود کو بچانے میں تاحال کامیاب رہے ہیں ۔ ظہیر الدین نے کہا ۔ کہ سرکاری سطح پر ملی بھگت سے ہم پر دباؤ ڈالنے ، ہراسان کرنے اور پھنسانے کیلئے انکوائری کا آغاز کیا گیا تھا ۔ لیکن تمام تر عمل خود اُن کے خلاف جانے کی وجہ سے یہ انکوائری روک دی گئی ۔اور کرپشن کے مر تکب عناصر کو بچا لیا گیا ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ اُس انکوائری کو سامنے لایا جائے ۔ تاکہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے ۔ انہوں نے کہا ۔ ہیکاپ اپنا قا نونی حق محفوظ رکھتا ہے ۔ اور ہیکاپ کے نام پر چترال میں پیراگلائڈنگ کا کوئی بھی دوسرا ایسوسی ایشن قانونی طور پر غلط اور قواعد و ضوابط کے خلاف ہے ۔ جبکہ اصل ہیکاپ ایک رجسٹرڈ ایسوسی ایشن ہے۔ جس کا نام ، وسائل اور مراعات کو استعمال کرنے کا حق کسی دوسرے کو نہیں پہنچتا۔ ]]>

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *