سالانہ امتحان میں اعلےٰ پوزیشن لینے والے طالبات کی اعزاز میں تقریب

studentتقریب میں طالبات نے تلاوت، نعت ، حمد ، قومی نغمے، نظم، تعلیم کی اہمیت کے موضوع پر تقاریر، ماں کی اہمیت پر نظم اور حاکے بھی پیش کئے گئے اور حاضرین سے داد لی۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سکول کے ہیڈ مسٹریس نورشابہ بی بی نے کہا کہ جب سے انہوں نے اس سکول کی چار ج لی ہوئی ہے ان کی کوشش رہی ہے کہ وہ طالبات کو نہایت محنت سے پڑھائے اور تمام استانیوں پر بھی زور دیتی ہے کہ وہ بھی طالبات کی روشن مستقبل کیلئے انتھک محنت کرے اور ان کی کوششوں کا یہ نتیجہ ہے کہ ان کی سکول کی ایک طالبہ نے میٹرک آرٹس گروپ کے امتحان میں پورے صوبے میں ٹاپ کیا۔ تقریب سے انیس الرحمان یوتھ کونسلر، احمد اللہ، محمد اسلم، شہزادہ منیر، سردار حکیم اور دیگر مقررین نے بھی اظہار حیال کرتے ہوئے طالبات کو داد دیتے ہوئے ان پر زور دیا کہ وہ اس سے بھی زیادہ محنت کرے تاکہ اپنے سکول، ملک اور علاقے کا نام روشن کرے۔ student2قررین نے مطالبہ کیا کہ نورشابہ بی بی کی دورانیہ پورا ہوا ہے ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ان کو یہاں سے ٹرانسفر نہ کرے تاکہ ہماری بچیاں مستقبل میں بھی اچھی تعلیم حاصل کرسکے۔ انہوں نے محکمہ تعلیم کے ارباب احتیار سے اپیل کی کہ اس سکول میں ریاضی ، سائنس، انگلش کی استانی تعینات کرے اور یہاں سائنس لیبارٹری کے ساتھ ساتھ کمپیوٹر لیب بھی تعمیر کرے تاکہ ہماری بچیاں سائنس کو عملی طور پر پڑھ سکے۔ ہمارے نمائندے سے باتیں کرتے ہوئے سکول کے طالبات، استانی اور نورشابہ بی بی نے کہا کہ ان کی کوششوں سے سکول کا نام تو روشن ہوگیا ہے مگر فی الحال ریاضی کی استانی، سائنس لیبارٹری کی شدید ضرورت ہے تاکہ بچیاں سائنس کی پریکٹس بھی کرسکے اور امید ہے کہ ان ضروریات کی تکمیل پر یہاں کی بچیاں سائنس گروپ میں بھی پورے صوبے میں ٹاپ کر جائے گی۔ student1تقریب میں پوزیشن لینے والی طالبات اور سکول کی ہیڈ مسٹریس میں انعامات بھی تقسیم کئے گئے۔ کلاس نہم کے طالبہ محسنہ بی بی 460 نمبر، شہناز احمد نے 459 نمبر، شایہ بہادر نے 450 نمبر اور سعدیہ کوثر نے 444نمبر حاصل کئے ۔ اسی طرح کلاس دہم (میٹرک) کے سائنس گروپ کے طالبہ مسرت شاہین نے 910 نمبر، حافظہ پروین نے 903 نمبر رقیہ حفیظ نے 898 نمبر اور آ رٹس گروپ کے حسینہ زیب نے 866 نمبر لیکر پورے صوبے میں ٹاپ کی جن کو ایوارڈز سے نوازا گیا۔ تقریب میں کثیر تعداد میں طالبات، والدین، منتحب نمائندے اور علاقے کے عمائدین نے شرکت کی جو مولانا عبد السمیع کے دعائیہ کلمات سے احتتام پذیر ہوئی۔ اس تقریب میں بچیوں نے جو ڈرامہ پیش کیا جن کا مقصد یہ تھا کہ بچوں کی تربیت اور ان کو نشے سے دور رکھنا نہایت ضروری ہے اسے حاضرین نے نہایت پسند کرتے ہوئے ان کو داد دئے بغیر نہ رہ سکے]]>

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *