Chitral bazaar littered with garbage

چترال(گل حماد فاروقی) چترال بازار گندگی کی ڈھیر کا منظر پیش کرنے لگامگر اس جانب کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے۔ عوامی مارکیٹ کے ساتھ مسجد کے مین گیٹ کے بالکل سامنے سڑک کے کنارے کئی دنوں سے گند پڑا ہے جس سے بدبو پھیلتی ہے اور مقامی دکانداروں کو نہایت تکلیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
bazaar سڑک جگہ جگہ ٹوٹ پھوٹ کا بھی شکار ہے اور سڑک کے وسط میں پانی بہنے سے اس میں کھڈے پڑتے ہیں۔اتالیق پُل کے ساتھ ہی گندگی کا ڈھیر کئی دنوں سے لگا ہے جس سے نہ صرف بدبو آتی ہے بلکہ اس کے کنارے پڑے رہنے سے اس میں کوئی بھی تخریبی کاروائی ہوسکتی ہے جس کے نتیجے میں یہ پُل اڑا بھی جاسکتا ہے۔ چند مقامی دکانداروں نے ہمارے نمائندے سے باتیں کرتے ہوئے کہا کہ اس گندگی سے پھیلنے والی بد بو نے ان کو نہایت تکلیف سے دوچار کیا ہے۔ چند لوگوں نے الزام لگایا کہ میونسپل انتظامیہ کے پاس سو سے زائد ملازمین ہیں مگر دفتر میں صرف دس بندے نظر آتے ہیں جبکہ باقی غائب رہتے ہیں۔
چترال کے عوام نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ میونسپل انتظامیہ کو پابند کرے کہ پورے ٹاؤن سے تمام گندگی کے ڈھیر ہٹاکر شہر کو صاف کریں تاکہ ایک طرف لوگ ان گندگی سے پھیلنے والے تعفن اور بدبو کی تکلیف سے بچ جائیں تو دوسری بیماریوں کے ساتھ ساتھ تخریبی کاروائی سے بچا جاسکتا ہے۔واضح رہے جہاں یہ گندگی کے ڈھیر پڑے ہیں وہاں محتلف حوانچہ فروش کھانے پینے کی چیزیں بیچتے ہیں اور برف بھی اس کے قریب فروخت ہورہی ہے۔

]]>

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *