Role of women – in east & the west

CHITRAL: Deputy Commissioner Chitral Aminul Haq said that today it is neither the fault of the West to turn women a showpiece nor the East can be blamed for depriving her of her rights. In fact, he added, the actual reasons behind these injustices was people’s deviation from the golden values of Islam. As a result, in the world of today somewhere men violated the rights of women and somewhere women enslaved the man. The DC stated this while speaking as a chief guest at a declamation contest on “Women’s role in eastern and western societies” held at the govt high school for girls Muldeh, Chitral. Mr Haq said the world created imperialism and capitalism and now there were efforts to promote democratic values but sadly there is no let-off in cruelties committed on human beings by their own fellow beings and neither these injustices can be eliminated without enforcing the system revealed by God. This is because only the Creator of mankind has the power and the ability to put in place a system that can be a panacea for all the ills of society.

چترال ( بشیر حسین آزاد ) ڈپٹی کمشنر چترال امین الحق نے کہا ہے کہ آج عورت کو شو پیس بنانے میں مغرب کا قصور ہے اور نہ اُسے حقوق سے محروم رکھنے کے حوالے سے مشرق کا بلکہ اصل وجہ اسلام کے آفاقی نظام پر چلنے سے انحراف ہے ۔ اس لئے معاشرے میں کہیں مرد عورتوں پر ظلم کرتے ہیں تو کہیں عورتوں نے بھی مردوں کو غلام بنایا ہوا ہے ۔

studentان خیا لات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز گورنمنٹ گرلز ہائی سکول مولدہ چترال میں ڈسٹرکٹ انتظامیہ اور ڈسٹرکٹ یوتھ فورم کے اشتراک سے ” مشرق و مغرب کے معاشرے میں خواتین کا کردار “کے موضوع پر منعقدہ تقریری مقابلے کے مو قع پر بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جس میں ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر چترال عبدالاکرم اور ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر معین الدین خٹک بھی موجود تھے ۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا ۔ دنیا کے انسانوں نے اشتراکیت اورسرمایہ دارانہ نظام کی تخلیق کی ۔اور آج جمہوری نظام کے فروغ کیلئے کوششیں کی جارہی ہیں ۔ لیکن انسانوں کے انسانوں پر ظلم کم نہیں ہوئے ۔ اور نہ اللہ کے نظام کے بغیر ان ظلم و زیادتی میں کمی ممکن ہے ۔ کیونکہ جس ہستی نے انسانی زندگی کو وجود بخشا ۔ وہ ہی اس کیلئے سب سے بہتر نظام دینے پر قادر ہے ۔

ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر چترال عبد الاکرم نے پروگرام کے انعقاد میں انتظامیہ کی مدد کرنے پر ڈسٹرکٹ یوتھ فورم کے عہدہ داروں کا شکریہ ادا کیا ۔ اور کہا کہ ان تقریبات کا مقصد طالبات میں موجود صلاحیتوں کو اجاگر کرنا ہے ۔ ڈی ای او معین الدین خٹک نے کہا ۔کہ اسلام کو مشرق کا مذہب قرار دیا جارہا ہے ۔ کیونکہ مشرق کا معاشرہ مذہب اسلام کے زیر نگین رہا ۔ حالانکہ مشرق میں بڑی تعداد دیگر مذاہب کے ماننے والوں کی ہے ۔ تقریری مقابلے میں جیوری نے لینگ لینڈز سکول اینڈ کالج کی طالبہ مصباح دانش کو پہلی ، انیسہ سلام قتیبہ پبلک سکول دوسری ، حافظہ جمال گورنمنٹ گرلز ہائی سکول مولدہ تیسری، اُم ہانی گورنمنٹ گرلز سنٹینل ماڈل ہائی سکول دنین کو مجموعی طور پر اچھی کارکردگی کی بنا پر نقد انعامات اور سرٹفیکیٹس دیے گئے ۔

سکول انتظامیہ کے مطالبے پر ڈپٹی کمشنر چترال نے امتحانی ہال ، لائبریری اور سپورٹس سنٹر کے سامان کی فراہمی سے متعلق ہر ممکن کوشش کرنے کی یقین دہانی کرائی ۔ تقریری مقابلے میں چترال کی مختلف سکولوں کی 13طالبات نے حصہ لیا ۔ ڈپٹی کمشنر نے تمام طالبات کیلئے نقد انعامات کا اعلان کیا ۔

]]>

One Reply to “Role of women – in east & the west”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *